گیت بنے ہتھیار

اے مردِ مجاہد جاگ ذرا ..شاعر طفیل ہوشیار پوری

اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
اللہ کی رحمت کا سایہ
توحید کا پرچم لہرایا
اے مردِ مجاہد جاگ ذرا
اب وقتِ شہادت ہے آیا
اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
سر رکھ کے ہتھیلی پر جانا
ہے ظلم سے تجھ کو ٹکرانا
ایمان ہے متوالا تو اسلام کا ہے رکھوالا تو
ایمان ہے تیرا سرمایہ
اے مردِ مجاہد جاگ ذرا
اب وقتِ شہادت ہے آیا
اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
باطل کی نظر للچائی ہے
انسان پہ تنگ خدائی ہے
سر کفر نے دیکھ ابھارا ہے
اسلام کو پھر للکارا ہے
تقدیر نے یہ دن دکھلایا
اے مردِ مجاہد جاگ ذرا
اب وقتِ شہادت ہے آیا
اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
تو ہاتھ مین اب تلوار اٹھا
رکھ سر پہ کفن میدان میں آ
تقدیر تیری تدبیر تیری
سب دنیا ہے جاگیر تیری
تاریخ نے ہے یہ بتلایا
اے مردِ مجاہد جاگ ذرا
اب وقتِ شہادت ہے آیا
اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
جاں جاتی ہے بے شک جائے
پرچم نہ تراجھکنے پائے
غازی کو موت سے کیا ڈر ہے
جان دینا جہادِ اکبر
قرآن میں ہے یہ فرمایا

اے مردِ مجاہد جاگ ذرا
اب وقتِ شہادت ہے آیا
اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
محبوبِ خداﷺ کے پروانے
دہرا اے اجداد کے افسانے
پیغامِ اخوت دینا ہے
یہ کام تجھ ہی سے لینا ہے
پھر کفر مقابل ہے آیا
اے مردِ مجاہد جاگ ذرا
اب وقتِ شہادت ہے آیا
اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
اللہ کی رحمت کا سایہ
توحید کا پرچم لہرایا
اے مردِ مجاہد جاگ ذرا
اب وقتِ شہادت ہے آیا
اللہ اکبر۔۔۔۔۔۔اللہ اکبر
اللہ اکبر

شاعر : طفیل ہشیارپوری
گلوکار : عنایت حسین بھٹی و کورس
موسیقی : رشید عطرے
فلم : چنگیز خان ( ۱۹۵۸ ء )

  • Print