1965 کالم

قسم اُس وقت کی…عمار چودھری

  • دفاع پاکستان کی گولڈن جوبلی منانے سے ایک فائدہ تو یہ ہواہے کہ نئی نسل کو اپنے وطن اور اپنی افواج کی حرمت کا احساس اور شعور حاصل ہوا ہے۔ اگر یہ گولڈن جوبلی اس طرح نہ منائی جاتی تو انٹرنیٹ‘ موبائل اور سوشل میڈیا کی اس نسل پر کبھی بھی آشکار نہ ہوپاتا کہ […]

  • ستمبر یاد آتا ہے….. نذیر ناجی

    جنگ ستمبر کے دو پہلو ہیں۔ ایک کشمیر کی جنگ اور دوسرا دفاع پاکستان کی جنگ۔ جہاں تک کشمیر کی جنگ کا تعلق ہے وہاں مستقل عالمی سرحد نہیں۔ لائن آف کنٹرول ہے (جو 1971ءکی جنگ سے پہلے سیزفائر لائن کہلاتی تھی)جسے دونوں طرف کی فوجیں جنگ بندی کے لئے ایک حد تسلیم کرتی ہیں۔ […]

  • قوم اور فوج……مجیب الرحمن شامی

    6ستمبر1965ءکو پچاس سال گزر گئے۔ نصف صدی پہلے آج ہی کے دن بھارتی فوج نے پاکستان پر اس زعم کے ساتھ حملہ کیا تھا کہ شام کو ا±س کے سالار جم خانہ میں مشروبات سے لطف اندوز ہوں گے۔ یلغار کا انداز ایسا تھا کہ بی بی سی نے لاہور پر بھارتی قبضے کی خبر […]

  • جنگ ابھی جاری ہے….میاں عامر محمود

    صرف ایک سال کے عرصے میں ‘ ایک منتشر اور پریشان حال قوم‘ کتنی منظم ‘ پراعتماد اور پرعزم ہو سکتی ہے؟ اس کی مثال آج کا پاکستان ہے۔ مجھے نہیں یاد کہ اعتماد‘ یکجہتی اور اتفاق رائے کا یہ ماحول کسی بھی دور میں پیدا ہوا ہو۔ حتیٰ کہ 1965 ءمیں جب فوج اور […]

  • وطن کی مائیں بیٹیاں سلام کہتی ہیں…ارشاد عارف

    میں پانچویں جماعت کا طالب علم تھا‘ جب 6 ستمبر کی صبح بھارت نے بین الاقوامی سرحد عبور کر کے پاکستان پر حملہ کیا۔ لاہور سے سینکڑوں کوس دور واقع قصبے میں جنگ کی اطلاع ریڈیو پاکستان پر اس وقت کے فوجی صدر ایوب خان کے نشری خطاب سے ملی اور بڑوں بوڑھوں کے علاوہ […]